We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

مسلی مری کلی، نظام بد کو چیلنج؟

6 0 4
14.01.2018

اپنی صوفیانہ شاعری سے آنے والی نسلوں کی بھی آنکھیں کھلی رکھنے والے درویش شاعر بابا بلھے شاہ کی نگری قصور کے ایک سراپا بے قصور گھرانے میں کھلتی، بہار بکھیرتی اک کلی کو جس طرح نظام بد کی علامت، سنگدل قاتل کے قتل در قتل کرکے کوڑے پر ڈالنے کا جو عوامی ردعمل سامنے آیا ہے، اس سے تویوں لگا کہ ابھی ہمارے بیمار و لاغر معاشرے میں کچھ جان باقی ہے۔ انتہائی خوف و ہراس کے ماحول اور شدید جسمانی و ذہنی اذیت میں جس طرح 7سالہ زینب کو موت کے گھاٹ اتارا گیا، اس پر جوملک گیر عوامی ردعمل پھوٹ پڑا ہے، لگتا ہے اسٹیٹس کو (نظام بد) کی شکست وریخت کا نتیجہ خیز عمل قصور ہی سے شروع ہو جائے، جواپنی بےقصوری اور فقط ایک ماہ میں اپنے 12بچے بچیوں کے پے درپے اغوا اور قتل پر بپھر گیاہے۔ جسے قابوکرنے پر دو قصوری پولیس کی فائرنگ سے شہیدہوگئے اور پوراملک اور بیرون ملک پاکستانی رنج و الم میں ڈوب گئے۔
واضح رہے شہر قصور، جس کے اس قدر ہراساں اور غیرمحفوظ ہونے پر شہر کی پولیس ٹس سے مس نہیں ہوئی، سے ہمارے لمحہ بہ لمحہ غیرمحفوظ حکمرانوں کا عوامی خرچے پر محفوظ ترین محل فقط دس بارہ کلومیٹر دور ہے جو 24گھنٹے سینکڑوں مسلح........

© Daily Jang