We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

یومِ خواتین پہ ایک منفرد کالم

3 0 44
10.03.2019

عالمی یومِ خواتین کی تقریبات کو دو دن گزر چکے ، مگر اِس بہانے سے والدہ مرحومہ پہ کچھ لکھنا چاہوں تو ایک ایسی عورت سامنے آ کھڑی ہوتی ہے جسے ماں ، بڑی بہن اور جدید دنیا میں کلاس فیلو کی درمیانی شکل سمجھنا چاہئیے ۔ ایک تو نئی صدی چڑھتے ہی جب انہوں نے آخری پرواز کا بورڈنگ کارڈ ہاتھ میں تھاما تو اُس وقت تک ’’وے پترا‘‘ کی پنجابی کپکپاہٹ ادھیڑ عمر آواز کا حصہ نہیں بنی تھی ۔

دوسرے ہم پہ پیدائش سے لے کر ہوش سنبھالنے تک چار سیالکوٹی پھوپھیاں ، اُن کی رشتے کی بہنیں ، بھانجے اور بھانجیاں یوں سایہ فگن رہیں کہ آبائی گھر میں آج کے پاکستان کی طرح اصل فیصلہ ساز ادارے کا پتا ہی نہ چل سکا ۔ دادا ، دادی اور ابا کی تکون کے بیچ امی کو کہاں تلاش کریں ؟ لاکھ سر کھپاؤں مگر صرف نصرت فتح علی کی قوالی ذہن میں گونجتی ہے کہ ’’اِنہی لطیف حجابوں کے درمیاں ہے علی‘‘ ۔

یہ تعارف اِس غلط فہمی کو جنم دے سکتا ہے کہ شاید میرے دادا نے بھی پنجاب کے روایتی مردوں کی طرح بیوی ، بیٹیوں اور دیگر خواتین کے ساتھ امتیازی سلوک روا رکھا یا ہماری پھوپھیوں نے اکلوتے بڑے بھائی کے خوف سے سوچا کہ بھابھی کو ٹف ٹائم‘ دیا جائے ۔ حقیقت میں نندوں کا رویہ سگی بہنوں سے بڑھ کر تھا ۔

رہے دادا تو انہوں نے ایسی رونقی طبیعت پائی تھی کہ کئی بار ہمارے ابا کو پیسے تھما کر کہا جاؤ ، امینہ کے ساتھ سنیما دیکھ آؤ اور ماں کو بھی لیتے جانا ۔ مسرت نذیر کی فلم ’یکے والی‘ دادا نے نوے دفعہ دیکھی ۔ یہ گینز بک آف ریکارڈز میں نام لکھوانے کی کوشش نہیں بلکہ ہوا یہ کہ آپ کو گوجرانوالہ کے سیٹلائٹ ٹاؤن میں سرکاری کوارٹر بنوانے کا ٹھیکہ مل گیا تھا ۔ پورے تین ماہ ریکس نام کے سنیما میں جاتے رہے ، اس لئے مئی کی اکتسویں تاریخ کو چھوڑ کر بھی نوے دن تو ہو گئے نا ۔

پھر بھی ہمارے سیالکوٹ والے گھر میں ساس بہو کی باہمی چاہت اور بچوں کے گرد پھوپھیوں کے مشفقانہ ہالے کے باوجود ابتدائی عہد کی تاریخ میں ہماری ماں کا کوئی نمایاں ذکر نہیں ملتا ۔

سوائے اس کے کہ سردیوں کے موسم میں نچلے باورچی خانے میں جو زیادہ گرم ہوتا ، چائے پراٹھا انہی کے ہاتھ سے ملا کرتا ۔ مگر ایک نامحسوس طریقے سے نظام کچھ طبقاتی نوعیت کا تھا ۔ مثال کے طور پہ دھوپ والا........

© Daily Pakistan (Urdu)