We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

ایک وقت میں ایک ہی کام اچھا ہوتا ہے

2 0 0
11.12.2018

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس جناب ثاقب نثار نے ملک میں آنے والے سالوں میں پانی کی قلت کی طرف توجہ دلا کر بذات خود پانی کے بڑے ذخائر کی تعمیر کے سلسلے میں رقم جمع کرنے کی مہم کا آغاز کیا۔ یہ وہ صلیب ہے جو ماضی میں حکومتوں کو اٹھانی چاہئے تھی لیکن چیف جسٹس نے اٹھالی۔ کسی نے غور کیا کہ آخر ماضی میں درجنوں حکومتیں اور حکمران آئے اور گئے ، پانی اور بجلی کی قلت کا مداوا نہیں کیا گیا۔

کسی نے داغ بیل بھی نہیں ڈالی ۔ پوری قوم پر ایک معاملہ کے سوا یہ سوچ غالب رہتی ہے کہ آج کا کام کل کرلیں گے۔ اور وہ کل کبھی نہیں آتی۔ جس ایک کام کو کل پر کوئی نہیں ٹالتا ہے وہ پیسہ کمانا، پیسہ بنانا، پیسہ چھیننا اور پیسہ سمیٹنا ہے۔

اگر داغ بیل ڈال دی گئی ہوتی تو آج قوم اپنے ذرائع سے پانی کے ایک سے زائد بڑے ذخائر تعمیر کرنے کی حالت میں ہوتی۔ جناب چیف جسٹس کو یہ بھی چاہئے کہ تمام بنکوں کو پابند کریں کہ وہ غیر ملکی کرنسی بھی وصول کریں ۔ بنک غیر ملکی کرنسی کی صورت میں ڈیم کی تعمیر کے لئے چندہ دینے والوں کو یہ کہہ کر رخصت کردیتے ہیں کہ ان کے پاس غیر ملکی کرنسی وصول کرنے کی سہولت نہیں ہے۔

بنک کیوں نہیں جمع کرسکتے؟ بہر حال ابھی وقت گزرا نہیں ہے۔ قوم پانی کو ترس نہیں رہی ہے۔ البتہ ناقص منصوبہ بندی، حکمت عملی اور تساہلی سے کم از کم صوبہ سندھ میں تو لوگ پینے کے صاف شفاف پانی اور زراعت کے لئے ترس رہے ہیں۔ یہ نااہلی........

© Daily Pakistan (Urdu)