We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

ایشو اور نان ایشو

3 0 0
07.12.2018

بڑا ہی مشکل محسوس ہوتا ہے کہ پاکستانی سیاست دانوں خصوصاً حکومت میں موجود لوگوں کو ایشو اور نان ایشو کا فرق کس طرح سمجھایا جائے۔ اگست کے مہینے میں پاکستان تحریک انصاف کی حکومت قائم ہوئی ہے۔ اخبارات دیکھ لئے جائیں تو معلوم ہوجائے گا کہ کس طرح نان ایشو کے معاملات پر توانائیاں خرچ کی گئی ہیں۔ بلا جواز، بلاضرورت، بلا وقت، جس کا کوئی نتیجہ نہیں نکل رہا ہے۔

البتہ خلفشار پیدا کیا گیا ہے۔ کس نے مشورہ دیا کہ لاہور میں گورنر ہاؤس کی دیوار کو مسمار کر کے لوہے کا جنگلا لگایا جائے۔ گورنر ہاؤس ہے یا چڑیا گھر۔ گورنر ہاؤس تو نہایت اہم اور معتبر جگہ ہوتی ہے۔کراچی میں قدیمی کاروباری مرکز ایمپریس مارکیٹ کے اطراف میں موجود تجاوزات کو مسمار کرنے کا کام کراچی کے میئر وسیم اختر کر رہے ہیں۔ پچاس پچاس سال سے کام کرنے والے لوگ بے روز گار ہو گئے ہیں، میئر یا حکومت نے کسی متبادل کا انتظام نہیں کیا۔

میئر کو سپریم کورٹ میں گزارش کرنا چاہئے تھی کہ متبادل انتظام سے قبل تجاوزات ہٹانے کی کارروائی بے مقصد اور فضول رہے گی۔ صوبہ سندھ میں وزیر تعلیم سردار علی شاہ سکولوں کے نصاب میں تبدیلی کی بات کر رہے ہیں۔ انہیں اچانک یہ خیال کیوں آیا ہے۔ نصاب کی تبدیل تو بہت ہی غور کرنے کا کام ہے۔

زلفی بخاری کے ذہن میں یہ خناس کیوں آیا کہ انہوں........

© Daily Pakistan (Urdu)