We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

غلط یقین

15 43 0
27.06.2019

2015میں ہونے والے ایک پول سروے کے مطابق 42فیصد امریکیوں کو یقین تھا کہ عراق کے پاس وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیار موجود تھے۔ صدر جارج ڈبلیو بش نے عراق پر اسی وجہ سے جنگ مسلط کی تھی۔ اس یک طرفہ جنگ میں لاکھوں عراقیوں کو ناقابلِ بیان مشکلات کا صرف اس لئے سامنا کرنا پڑا کیونکہ امریکہ کی جنگجو حکومت نے غلط بیانیہ اپنے عوام کے ذہن میں اتارتے ہوئے اُنہیں یقین دلا دیا تھا کہ عراق کے جوہری اور کیمیائی ہتھیار اُن کے لئے خطرہ بن سکتے ہیں۔ عراق کو تباہ و برباد کر دینے اور ہتھیار نہ ملنے کے کئی سال بعد بھی دس میں سے چار امریکی اُسی یقین پر قائم ہیں۔ لوگ غلط یقین پر کیوں قائم رہتے ہیں؟ یقین کو جھٹلانے والی نئی معلومات سامنے آنے پر بھی لوگ اپنی سوچ میں تبدیلی کیوں نہیں لاتے؟ لیکن ioaN سوال یہ بھی پیدا ہوتا ہے کہ ہمیں کیسے پتہ چلے کہ ہم جس پر یقین رکھتے ہیں وہ یقینی طو ر پر درست ہی ہے۔ ایک آن لائن رسالے، ’’فاسٹ کمپنی‘‘ کے نومبر 2018میں شائع ہونے والے ایک مضمون کے مطابق، ’’ہم سنی سنائی بے سروپا چیزوں پر یقین کر لیتے ہیں لیکن ہم اُن کی تصدیق کے لئے خود تحقیق نہیں کرتے ہیں‘‘۔ اس کے مطابق ’’ہم کس طرح کسی یقین تک پہنچتے ہیں، اس کا دارومدار اس بات پر کہ اسے ہمارے ذہن میں کس مہارت سے اتارا جاتا ہے، نہ کہ اس پر یہ کس حد تک درست ہے۔ مجرد تصورات کی تشکیل (وہ جو ہمارے براہِ راست، عملی تجربے کے دائرے سے باہر ہوتے ہیں اور جنہیں ہم تک زبان کے ذریعے پہنچایا جاتا ہے) صرف انسانوں کے........

© Daily Jang