We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

روپیہ پیسہ پیسہ، منڈی تار و تار

6 11 0
19.05.2019

روپیہ پیسہ پیسہ ہو کر قدر کھو رہا ہے۔ لوگوں کی بچتیں 50 فیصد تک کم ہو کر رہ گئیں، اسٹاک مارکیٹ کریش پہ کریش ہوئی جا رہی ہے۔ ڈالر خریدا تو جا رہا ہے لیکن 150 روپے فی ڈالر پہ بھی دستیاب نہیں۔ اب دبئی مارکیٹ جب اتوار کو کھلے گی تو سوموار کو معلوم پڑے گا کہ روپیہ کہاں تک گر کے دم لے گا بھی یا نہیں۔ حکومت بے بسی سےا سٹیٹ بینک کو تک رہی ہے اور اس کے آئی ایم ایف کے مقرر کردہ نئے گورنر نے بینکوں کو آنکھ کے اشارے سے منڈی کی قیاس آرائیوں کے آگے چپ سادھتے ہوئے انٹر بینک ریٹ کو بھی 147 روپے تک بڑھا دیا ہے۔ حالانکہ جن لوگوں نے ڈالر ذخیرہ کر کے رکھا تھا، انہوں نے خوب مال کمانے کے لیے ڈالر کیش کروائے تو ڈالرز کی رسد بڑھنے کے باوجود اس کی قیمت نیچے نہیں آئی، اوپر ہی اوپر محوِ پرواز ہے۔ ایسے میں کرنسی کے کاروباری ڈالر اور سعودی ریال جمع کیے جا رہے ہیں تاکہ منڈی میں ڈالر کی رسد مصنوعی طور پر کم رکھ کر کل کو قیمت اور بڑھنے پر خوب مال کمائیں۔ پاکستان کی زرِمبادلہ کی کھلی منڈی چھوٹی ہے اورا سٹیٹ بینک بہ آسانی ذخیرہ خوروں اور سٹہ بازوں کو لگام دے دیتا تھا۔ اب اسٹیٹ بینک آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدے کی خفیہ شرائط (جن پر اگلے بجٹ میں عملدرآمد ہونا تھا) پر معاہدہ ہونے سے پہلے ہی عمل پیرا ہو چکا ہے۔ آئی ایم ایف کے ساتھ سوا تین سال کے چھ ارب ڈالرز کے پروگرام سے پاکستان کی معیشت کی مشکیں کسنے یا مالیاتی استحکام لانے کا جو معاہدہ ہونے جا رہا ہے، اس کے لاگو ہونے........

© Daily Jang