We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

چھج پتا سے ونڈاں!

14 18 0
22.04.2019

آج میرا دل باغ باغ ہے، خوشی کا کوئی ٹھکانہ نہیں ہے، جسمانی اعضاء آمادئہ رقص ہیں، فضاء خوشبو سے معطر ہے، پھولوں میں رنگوں کی بہار آگئی ہے، پرندے زور زور سے چہچہارہے ہیں، سرخ گانی والے طوطے سریلی آواز میں نغمہ کناں ہیں، بلبلیں خوشی کے ترانے چھیڑ رہی ہیں، اقتدار کا پرندہ ہما اسلام آباد سے اڑتے اڑتے سیالکوٹ پہنچ چکا ہے۔ ملک کی سب سے محبوب، خوبصورت اور دھڑلے دار خاتون ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کو جونہی مشیر اطلاعات بنانے کی خبر سنی، میں جھوم جھوم اٹھا۔ دل چاہا کہ زور زور سے ڈھول بجائوں اور پتاسے بانٹ کر لوگوں کا منہ میٹھا کرائوں۔ اِن دنوں صحافت جن بلائوں اور ظالم ہوائوں میں گھر چکی ہے، اُسے فردوس عاشق اعوان جیسی دبنگ شخصیت ہی دوبارہ سے چار چاند لگا سکتی ہے۔

سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ میری ہیروئن ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، اپنے حاسدین کو یوں پچھاڑ کر تختِ اقتدار پر دوبارہ براجمان ہو جائیں گی۔ یہ خیال بھی محال تھا کہ سیالکوٹی ڈاروں اور سیاسی دشمنوں کو رسوا کرتے ہوئے وہ الیکشن ہارنے کے باوجود سب سے اہم وزارت لے اڑیں گی، اُن کی رقیب کشمالہ طارق کے احاطہ سوچ میں بھی نہیں ہو گا کہ اُن کو سرعام رسوا کرنے والی ڈاکٹر فردوس عاشق، اندر ہی اندر سے سرنگ لگا کر حکومت پاکستان کی مشیرِ اطلاعات بن جائیں گی، مگر یہ ہو چکا ہے، وزیراعظم عمران خان کی ’’مردم شناسی‘‘ کی داد دینا چاہئے کہ اُنہوں نے لاکھ پردوں میں چھپے ہیرے کو تلاش کر کے انتہائی میرٹ پر اِسے مشیرِ اطلاعات کے عہدے پر فائز کر دیا ہے۔ زمانہ تو پہلے ہی اسد عمر اور عثمان بزدار جیسے نادر موتیوں کو سامنے لانے پر اُنہیں ’’مردم شناسی‘‘ کا اعلیٰ ترین اعزاز دے چکا لیکن یہ ناچیز صحافی اُن کی مردم شناسی کا........

© Daily Jang