We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

صدر ایوب بنام صدر علوی

32 12 0
19.04.2019

مکافات نگر

صدارتی محلہ

مکان نمبر 58ٹوبی

ڈئیر مسٹر پریزیڈنٹ عارف علوی صاحب

السلام علیکم!

امید ہے آپ قصر صدارت میں مزے سے مشاعروں کے لطف اُٹھا رہے ہوںگے۔ صدارتی محلہ مکافات نگر میں آج کل آپ کا بہت ذکر ہورہا ہے، کہا جارہا ہے کہ پاکستان میں پھر سے صدارتی نظام لایا جارہا ہے۔ گزشتہ رات پاکستان کے پہلے صدر اسکندر مرزا کے گھر دعوت تھی، جس میں میرے علاوہ صدر یحییٰ خان اور صدر ضیاءالحق بھی شامل ہوئے۔ صدر مشرف کی کرسی خالی رکھی گئی، مقصد اُن کی علامتی حاضری ظاہر کرنا تھا۔ اِن تمام صدور نے میری سربراہی میں ایک ایکشن کمیٹی تشکیل دی ہے، جس کا مقصد وطن عزیز میں پھر سے صدارتی نظام کی راہ ہموار کرنا ہے۔ میرا یہ خط اِسی سلسلے کی پہلی کڑ ی ہے۔

ڈئیر صدر صاحب!

ہمیں اطلاع ملی ہے کہ محلہ جمہوریت میں ذوالفقار علی بھٹو کی سربراہی میں دو دن پہلے سابق وزرائےاعظم کی ایک ملاقات ہوئی۔ سہروردی، بھٹو، جونیجو اور بینظیر اس معاملہ میں پیش پیش تھے۔ اُنہوں نے میٹنگ میں صدارتی نظام کے خلاف قرارداد مذمت بھی پیش کی۔ میری سیاسی حریف فاطمہ جناح بھی اجلاس میں شریک ہوئیں اور صدارتی نظام کے نفاذ پر تحفظات کا اظہار کیا۔ مذاقاً یہ بھی کہا کہ صدارتی نظام لائلپور کا گھنٹہ گھر ہے، جس میں شہر کے آٹھ بڑے بازاروں کا راستہ کھلتا ہے۔ یہ خبر بھی ملی ہے کہ اُن وزرائےاعظم نے قائداعظم سے ملاقات کر کے اُنہیں شکایت لگائی ہے کہ ملک میں ایک بار پھر صدارتی نظام لانے کی سازش ہو رہی ہے۔ اِس حوالے سے قائداعظم جلد ہی ایک پالیسی بیان جاری کریں گے۔........

© Daily Jang