We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

بھارتی انتخابات میں فاتح کون؟

8 4 17
13.04.2019

دنیا کی سب بڑی جمہوریت، انڈین لوک سبھا کے 17ویں انتخابات کا پہلا مرحلہ مکمل ہو گیا، 20ریاستوں کی 91نشستوں کے لئے 14کروڑ 20لاکھ ووٹرز نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔ کُل ایک ارب 30کروڑ آبادی والے ملک میں 90کروڑ ووٹرز اگلے پانچ سالوں کے لئے 543نشستوں پر اپنی قیادت کا چناؤ کرنے جا رہے ہیں۔ 7مراحل میں منعقد ہونے والے انتخابات 6ہفتوں میں مکمل ہوں گے اور ان کے حتمی نتائج کا اعلان 23مئی کو ہوگا۔ بھاری ہندو میجارٹی کے باوجود رنگا رنگ ہندوستان مختلف مذاہب، ثقافتوں اور زبانوں کا ملک ہے، جسے مشترکہ ہندی تہذیبی اقدار اور سیکولر اپروچ پر مبنی جمہوری پارلیمانی آئین نے ایک وحدت اور طاقت بخش رکھی ہے، جو اپنی ابھرتی اکانومی اور طاقتور فورس کے ساتھ خود کو چین کی مسابقت میں دیکھتا ہے مگر افسوس اس وقت پاکستان کی طرح یہ اتنی بڑی جمہوریت بھی قیادت کے بحران سے دوچار ہے۔ ایک طرف راہول گاندھی کی قیادت میں اندرا کانگرس ہے تو دوسری طرف نریندر مودی کی رہنمائی میں بی جے پی کی حکمرانی۔

جدید ہندوستان کے لئے کانگرس کی خدمات کسی تعارف کی محتاج نہیں، یہی وہ سیکولر پارٹی ہے جس نے نہ صرف آزادیٔ ہند کے لئے بھرپور کوشش کی بلکہ مابعد ایک روادار اور جدید ہند کی تعمیر کے لئے گاندھی جی کے آدرشوں اور پنڈت نہرو کی قیادت میں بے مثال جد وجہد کی۔ بھارتی آئین اس کی سب سے خوبصورت مثال ہے، جسے ہندو توا یا ایس ایس آر والے بھی مسخ کرنے سے قاصر ہیں۔ پنڈت جی کے بعد ان کی باصلاحیت بیٹی اندرا گاندھی نے اپنے جمہوری ملک کو جس خوش اسلوبی سے آگے بڑھایا، اُس پر تنقید کی زیادہ گنجائش نہیں۔ کانگرس کی یہ........

© Daily Jang