We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

شہزادے کی آمد اور ’’بدلہ لو انڈیا‘‘

10 12 132
17.02.2019

اِک عرصے کے بعد سعودی عرب سے نہایت مقتدر ولی عہد محمد بن سلمان کی آمد آمد ہے کہ ہر طرف شادیانے بج رہے ہیں۔ لیکن عین اس وقت مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ کے ایک گائوں لیتھی پورہ کے ایک 20 سالہ نوجوان عادل احمد ڈار نے جموں و کشمیر ہائی وے پہ سنٹرل ریزرو پولیس فورس کے ایک بڑے قافلے سے اپنی بارود سے بھری گاڑی ٹکرا کر چالیس سے زیادہ جوانوں کو مار دیا اور درجنوں زخمی ہو گئے۔ اخباری اطلاعات کے مطابق یہ نوجوان اُن بچوں میں سے تھا جنہیں بھارتی فوج کے ہاتھوں تذلیل کا سامنا رہااور مبینہ طور پر اس کا تعلق جیش محمد سے بتایا گیا ہے یا جوڑا گیا ہے۔ اس بڑی کارروائی پر پورے بھارت میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی اور مودی حکومت اور بھارتی جنتا پارٹی کو اپنی پھیکی انتخابی مہم میں ایک اشتعال انگیز مسالا مل گیا۔ کابینہ کی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں پاکستان کو سخت خمیازہ بھگتنے کی دھمکی کے ساتھ ساتھ فوج کو جوابی کارروائی کے لیے ’’کھلا ہاتھ‘‘ دیتے ہوئے بھارت نے پاکستان کو تجارتی اعتبار سے ’’پسندیدہ مملکت‘‘ (MFN) کا جو کاغذی اسٹیٹس دیا ہوا تھا، واپس لینے کا اعلان کر دیا۔ ہفتہ کو تقریباً تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین کو ایک بریفنگ دی جانی تھی کہ سب مل کر پاکستان مخالف محاذ کو گرم کریں۔ بھارتی میڈیا کی جانب سے ’’بدلہ لو انڈیا‘‘ کا نعرہ بلند کیا گیا ہے اور سوائے بدلہ لینے اور سبق سکھانے کے کوئی آواز سنائی نہیں دے رہی۔ لگتا ہے کہ انتخابی گہما گہمی میں پاکستان مخالف جذبات اور ’’آتنک واد‘‘ (دہشت گرد) کے خلاف مہم میں بڑی جماعتیں خوب گلا پھاڑیں گی۔ بلاشبہ یہ دہشت گردی کا بڑا واقعہ ہے جو دو ملکوں میں کسی نوعیت کی جنگ کا باعث بن سکتا ہے۔ لیکن چند لوگوں کے سوا کوئی یہ کہنے کی جرات نہیں کر رہا آخر........

© Daily Jang