We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

جوہی کے پانی چور اور احتجاج کے سو دن

3 9 76
30.11.2018

سندھ کے ضلع دادو میں ملکی ذخائر سے مالامال جوہی میں جوہی برانچ پر حکمران پارٹی کے زور آور وڈیروں سرداروں اور ان کے وانٹھوں کے ہاتھوں نہری پانی پر دن دہاڑے ڈاکے کیخلاف متاثرین آبادگاروں کی طرف سے مسلسل احتجاج کو بھی اتنے ہی دن ہونے کو ہیں جتنے وزیر اعظم عمران خان کی حکومت کو ہونیوالے ہیں۔ یہ احتجاجی چھیاسی دن جوہی میں اور گزشتہ سولہ دنوں سے کراچی پریس کلب کے سامنے دھرنا دئیے ہوئے ہیں۔ ان میں مرد بھی ہیں، عورتیں اور بچے بھی۔ یہ آبادگار اور ہاری ہیں جو جوہی اور کاچھو کے علاقے کے بے تاج یا باتاج بادشاہ ایک سیاسی رہنما، اس کے بھائی اور ان کے قبیلے کے ان لوگوں کے خلاف جو جوہی کے مشرق میںبالائی علاقے سےبادشاہت بناکر بیٹھے ہوئے ہیں اور جوہی برانچ کی پوچھڑی یا زیریں علاقے کے غریب آبادگاروں اور کسانوں کے حصے کا پانی بزور طاقت اور بندوق چرائے ہوئے ہیں۔ میں نے کل شب کراچی احتجاجیوں اور علاقے کے لوگوں سے ٹیلیفون پر بات چیت کی انکا کہنا ہے کہ جوہی برانچ کے بالائی حصے میں با اثر لوگوں اور انکے حواری جگہ جگہ ٹریکٹروں، لفٹ مشینوں (لفٹرز)، پائپوں کے ذریعے پانی زبردستی لوٹ کر اپنی زمینوں پر لے کر جا رہے ہیں۔ جس سے پوچھڑی یا زیریں علاقے جو کہ نو میلوں پر مشتمل ہیں،تک پانی نہ پہنچنے سے ان کی زمینیں اور خود جوہی برانچ کا نچلا حصہ وسیع علاقے میں خشک اور ویران ہو چکا ہے۔ متاثرہ زمینوں کے آبادگاروں کے احتجاج و........

© Daily Jang