We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

اردو کی شکل بگڑ رہی ہے

10 8 119
23.11.2018

بر صغیر کی تقسیم کے بے شمار فائدے ہوں گے مگر جو دو چا ر نقصان ہوئے ہیں وہ دل پر برچھی کی طرح لگتے ہیں۔ ان میں ایک گھاٹا یہ ہوا کہ ہماری زبان اردو بری طرح رُل گئی۔ نہ ادھر کی رہی نہ ادھر کی۔ اس کا کوئی علاقہ نہیں رہا ، کوئی سرزمین نہیں رہی۔ جس زبان کا سارا حسن اس سے وابستہ تہذیب سے ہو، جب وہ تہذیب ہی دربدر ہو جائے تو اردو کا پرسان حال کون ہوگا۔ یہ سب میں خاص طور پر اُس وقت لکھ رہا ہوں جب شہر شہر اور نگر نگر اردو کانفرنسیں، ادبی میلے اور ثقافتی اجتماع اور بڑے بڑے کتاب میلے اور طرح طرح کے جشن اور فیض میلے جیسی تقریبات ہو رہی ہیں۔ مانتا ہوں کہ ان کارروائیوں میں اردو کا نام نمایاں ہے لیکن کبھی ان کانفرنسوں کے پروگرام اور ان کی تفصیل اٹھا کر دیکھئے۔چند عنوان یوں ہیں:جدیدیت، کلاسیکیت، بعد، مابعد، تخلیقی جہات ، غرض یہ کہ ایسے ہی عنوان چلتے ہیں جہاں تک موضوعات چلیں۔ زبان پر جو اصل افتاد پڑی ہے اس کی طرف اشارے تو ہیں لیکن جو بات کھل کر اور صاف صاف کرنی ہے اس کا ذکر نہیں۔ پندرہ بیس برس اُدھر کی بات ہے، ہم نے اپنے بی بی سی کے زمانے میں ایک سروے کیا اور زبان کے اکابرین سے پوچھا کہ آپ کو اردو کا مستقبل کیسا نظر آتا ہے۔ ہمارے دوست غازی صلاح الدین کے جواب پر بات آن کر ٹھہری۔انہوں نے کہا کہ اب تو پنجاب طے کرے گا کہ اردو کا مستقبل کیسا........

© Daily Jang