We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

یو ٹرن کی سہولت

11 106 108
19.11.2018

حماقت اور عقلمندی میں فرق یہ ہے کہ عقلمندی محدود ہوتی ہے مگر بے وقوفی کی کوئی حد نہیں۔ (آئن اسٹائن)

اگرچہ نئے پاکستان میں اتفاق ہو چکا ہے کہ یوٹرن اچھے ہوتے ہیں اور ان دنوں ہر انصافیا یو ٹرن کی فضیلت و افادیت بیان کرنے میں لگا ہوا ہے مگر اڑچن یہ ہے کہ یو ٹرن بعض اوقات پوائنٹ آف نو ریٹرن پر لے جاتے ہیں۔ مثال کے طور پر پشاور کا بس ریپڈ ٹرانسپورٹ منصوبہ‘ جسے میں نے رواں سال کے آغاز پر دنیا کا آٹھواں عجوبہ قرار دینے کی جسارت کی تھی، اسے پے درپے یو ٹرنز کی بدولت نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا کے مہنگے ترین مواصلاتی منصوبے کا اعزاز حاصل ہو چکا ہے۔ جناب پرویز خٹک جب خیبر پختونخوا کے وزیراعلیٰ تھے اور اس منصوبے کی لاگت 49ارب روپے بیان کیا کرتے تھے تو خاکسار نے اس کالم میں انکشاف کیا کہ بی آر ٹی منصوبے کی ممکنہ لاگت کا تخمینہ 69ارب روپے کے قریب پہنچ چکا ہے۔ یہ حساس قومی راز افشا کرنے پربندۂ گستاخ کو نہایت فراخدلی کے ساتھ گالیوں سے نوازا گیا۔ جب صوبائی حکومت کی طرف سے دعویٰ کیا گیا کہ 31مئی کو اس منصوبے کا افتتاح ہو جائے گا اور پھر 30جون کی ڈیڈ لائن مقرر کی گئی اور میں نے تعجب کا اظہار کیا تو مجھے لفافہ صحافی کا خطاب دے دیا گیا لیکن اب نئے پاکستان میں باضابطہ طور پر ان باتوں کی توثیق کر دی گئی ہے تو سوچتا ہوں گالیوں سے لیس توپوں کا رُخ کس طرف موڑا جائے گا؟ ’’ایکنک‘‘ نے چند روز قبل بی آر ٹی کے جس نظر ثانی........

© Daily Jang