We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

عمران خان مہاتیر محمد سے کیا مستعار لیں

15 37 44
29.10.2018

ایک سیاستدان کے پاس تین ہیٹ ہونے چاہئیں، ایک اچھالنے کیلئے، ایک وقت گزاری کیلئے اور ایک منتخب ہو جانے کی صورت میں خرگوش نکالنے کے لئے۔ (امریکی مصنف اور شاعر، کارل اسینڈ برگ)

کارل اسینڈ برگ نے شاید امریکہ میں رائج سیاست کے پیش نظر یہ بات کہی ہو گی ورنہ پاکستان جیسے غیر ترقی یافتہ ممالک میں تو سیاستدانوں کے پاس عوام کو لُبھانے کیلئے لاتعداد ہیٹ ہونے چاہئیں۔ اقتدار میں آنے کیلئے جانے کیا کیا پاپڑ بیلنا پڑتے ہیں، اپوزیشن میں رہتے ہوئے حکومت کو غلط ثابت کرنے کیلئے ہتھیلی پر سرسوں جمانا پڑتا ہے، انتخابی منشور میں ستاروں پر کمند ڈالنے کی باتیں ہوتی ہیں، اس دریا پر بھی پُل بنانے کا وعدہ کر لیا جاتا ہے جس کا کوئی وجود ہی نہیں ہوتا۔ کسی سیاستدان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ ایک جلسے کے دوران عوام نے بتایا کہ ان کے علاقے میں میٹرنٹی سینٹر نہیں ہے، انہوں نے سوچے سمجھے بغیر اعلان کر دیا کہ میں جیت گیا تو یہاں ایک نہیں دو میٹرنٹی سینٹر بنوائوں گا، ایک خواتین کیلئے ایک حضرات کے لئے۔ انتخابی مہم کے دوران غیر حقیقی وعدے کرنے کا یہ چلن محض پاکستان تک محدود نہیں بلکہ دنیا بھر کی سیاسی جماعتیں ووٹ لینے کیلئے ایسے ہی سبز باغ دکھاتی ہیں۔ آپ ملائیشیا کی مثال لے لیں جہاں اسی سال انتخابات ہوئے اور اپوزیشن اتحاد نے سابق وزیراعظم مہاتیر محمد کی قیادت میں کامیابی حاصل کی۔ وزیراعظم نجیب رزاق پر کرپشن اور آمدنی سے زائد اثاثہ جات کے الزامات عائد ہوئے تو عملی سیاست سے سبکدوش ہو........

© Daily Jang