We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

قلم والے ہاتھوں میں ہتھکڑیاں

7 0 14
17.10.2018

اساتذہ کسی بھی قوم کا سرمایہ ہوتے ہیں جن کا قوم کی ترقی اور کامیابی میں اہم کردار ہوتا ہے۔ تدریس کے مقدس شعبے سے وابستہ یہ اساتذہ پیسے سے زیادہ عزت کے متمنی ہوتے ہیں جبکہ ان کے شاگرد بھی اُنہیں عزت و احترام کی نگاہ سے دیکھتے اور باپ کا درجہ دیتے ہیں۔ مذہب اسلام میں معلم کے کیا درجات ہیں، اِس کا اندازہ سیدنا حضرت علیؓ کے اس قول سے لگایا جا سکتا ہے کہ ’’جس نے مجھے ایک لفظ بھی سکھایا، میں اُس کا غلام ہوں‘‘۔ زندہ قومیں اپنے اساتذہ کا کتنا احترام کرتی ہیں، اس کا اندازہ اس واقعہ سے لگایا جا سکتا ہے جس کا ذکر معروف دانشور اشفاق احمد نے اپنی کتاب میں کیا ہے۔ اشفاق احمد کے بقول ایک دفعہ اٹلی کے شہر روم میں مصروفیت کے باعث وہ وقت پر ٹریفک چالان نہ بھر سکے جس پر اُنہیں کورٹ طلب کیا گیا۔ جج کے استفسار پر جب انہوں نے بتایا کہ میں تدریس کے شعبے سے وابستہ ہوں اور کام کی زیادتی کی وجہ سے چالان بھرنے کیلئے وقت نہیں نکال سکا تو یہ سنتے ہی جج سمیت کمرۂ عدالت میں موجود ہر شخص احتراماً کھڑا ہو گیا اور میرا چالان ختم کر دیا گیا‘‘۔

دنیا کے ترقی یافتہ ممالک کے برعکس پاکستان میں اساتذہ کا کیا مقام ہے اور اُن کے ساتھ کس طرح کا سلوک روا رکھا جاتا ہے، اس کا اندازہ گزشتہ دنوں سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی وڈیو دیکھ کر لگایا جا سکتا ہے جو دیکھتے ہی دیکھتے جنگل کی آگ کی طرح پوری دنیا میں پھیل گئی۔ یہ وڈیو جس نے بھی دیکھی، اِس نے اُسے دکھی کر دیا۔ وڈیو میں ایک پولیس اہلکار 6افراد جن کے چہروں پر بے بسی اور شرمندگی صاف ظاہر ہو رہی تھی، کو زنجیروں سے جڑی ہتھکڑیاں لگا کر ایسے لے جا رہا ہے جیسے کوئی........

© Daily Jang