اوورسیز پاکستانیوں کی طرف سے ملک میں بھیجی جانے والی رقم میں 8.6فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ پاکستان کو امریکہ، برطانیہ، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سے حاصل ہونے والی رقوم مجموعی ترسیلات کا تقریباً 67فیصد ہیں۔ تحریک انصاف کی حکومت کی تبدیلی کیساتھ ہی اوورسیز پاکستانیوں نے بھی ملک میں رقم بھیجنا کم کر دی ہے، اس کی وجہ 13جماعتی حکمران اتحاد کا اوورسیز پاکستانیوں کے ساتھ وہ سوتیلا پن ہے جس کے تحت انہوں نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں سے ووٹ کا حق چھینا، ایئرپورٹ پر انہیں میسر سہولیات ختم کیں۔ اگر دیکھا جائے تو اس وقت سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور برطانیہ سے آنے والی ترسیلات زر میں بڑی واضح کمی آئی ہے۔ اس کی دوسری وجہ ان ملکوں میں لیبر کے مسائل ہیں۔ موجودہ حکومت نے بیرون ملک بسنے والے پاکستانیوں کے مسائل پر بالکل توجہ نہیں دی۔ جب حکومت اوورسیز پاکستانیوں کو سہولیات فراہم نہیں کرے گی،ان کے خلاف مقدمات درج کروائے گی ، تو وہ ملک میں پیسے کیونکر بھیجیں گے۔حکومت نے جون 2023ء تک بیرون ملک 34ارب ڈالر کے قرض کی ادائیگی بھی کرنی ہے۔ اگر حالات ایسے ہی رہے تو نہ اوورسیز پاکستانی پیسے بھیجیں گے نہ ہی کوئی دوسرا ملک مدد کے لیے آگے بڑھے گا ، یقینی طور پر ملک ڈیفالٹ کی جانب ہی بڑھے گا۔ لہٰذا فیصلہ سازوں کو معاشی حالات بہتر کرنے کے لئے اوورسیز سے رجوع کرنا پڑے گا۔
QOSHE - ترسیلات زر میں مسلسل کمی، خطرے کی گھنٹی - اداریہ
We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

ترسیلات زر میں مسلسل کمی، خطرے کی گھنٹی

18 0 0
28.11.2022




اوورسیز پاکستانیوں کی طرف سے ملک میں بھیجی جانے والی رقم میں 8.6فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ پاکستان کو امریکہ، برطانیہ، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سے حاصل ہونے والی رقوم مجموعی ترسیلات کا تقریباً 67فیصد ہیں۔ تحریک انصاف کی حکومت کی تبدیلی کیساتھ ہی اوورسیز پاکستانیوں نے بھی........

© Daily 92 Roznama


Get it on Google Play