We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

اب آئینے میں کس کو ڈھونڈتے ہو؟

2 0 0
13.07.2018

اب آئینے میں کس کو ڈھونڈتے ہو؟

ایک ہی چیز کے کئی رخ ہوسکتے ہیں یا کم از کم دو رخ تو طے ہیں۔ سوال صرف یہ ہے کہ آپ اُسے کس طرح دیکھتے ہیں۔ دیکھنے کا انداز اور دیکھتے وقت آپ کے ذہن کی حالت کسی بھی چیز کو کچھ سے کچھ بنا دیتی ہے۔ ایک ہی چیز کسی کے لیے مثبت کے لیے اور کسی کے لیے منفی۔ یہ فرق سوچنے کے فرق سے پیدا ہوتا ہے۔ ایسا نہیں ہے کہ کوئی بُری چیز کسی اور طرح دیکھنے سے بُری نہیں رہتی۔ مسئلہ یہ ہے کہ جب لوگ کسی معاملے میں پہلے سے کچھ طے کرلیں‘ تو اچھی چیز بھی بُری دکھائی دیتی ہے۔ اور یہ سلسلہ زندگی بھر جاری رہتا ہے۔

ہم میں سے کون ہے ‘جو اپنی بات کے آگے کسی کی کسی بھی بات کو درست تسلیم کرنے کے لیے تیار ہو؟ کم ہی لوگ ہیں‘ جو دوسروں کے نقطۂ نظر کو درست تسلیم کرنے کے لیے خود کو راضی کر پاتے ہیں۔ سچ یہ ہے کہ ہم زندگی بھر اسی خوش فہمی یا غلط فہمی میں مبتلا رہتے ہیں کہ صرف ہمارا نقطۂ درست ہے اور باقی جو کچھ بھی دیکھا اور سوچا جارہا ہے‘ اُس میں صرف کھوٹ پائی جاتی ہے۔

اپنی بات کو درست اور باقی سبھی کی ہر بات کو غلط قرار دیتے رہنے کی روش پر گامزن رہنے سے ہم رفتہ رفتہ ایک ایسے دائرے تک محدود ہو جاتے ہیں‘ جو ہمارے پورے وجود کو ہر معاملے میں محدود کرتا چلا جاتا ہے۔ اپنی بات کو درست قرار دینے اور منوانے کی روش رفتہ رفتہ خود پسندی کو فروغ دیتی ہے۔ خود پسندی وہ زہر ہے‘ جس کا تریاق صرف موت ہے‘ یعنی انسان مرتے دم تک خود پسندی کے جال سے نکل نہیں پاتا۔

دنیا کے ہر ناخواندہ اور شعور سے........

© Roznama Dunya