We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

کنگ آف منی لانڈرنگ کیس

5 1 2
06.07.2018

کنگ آف منی لانڈرنگ کیس

بلا شبہ پاکستان کی تاریخ کا تو ہے ہی‘ ساتھ ساتھ دنیا کی تاریخ میں بھی یہ منی لانڈرنگ کا سب سے بڑا مقدمہ ہے‘ جس کے سب سے بڑے ملزم نے ٹرائل کورٹ سے سب سے بڑی فرمائش کر ڈالی۔

آج کنگ آف آل منی لانڈرنگ کیس کا فیصلہ ہے۔ معلوم نہیں پہلے آپ کے ہاتھ میں آج کا وکالت نامہ آئے گا‘ یا آلِ شریف منی لانڈرنگ کیس کا فیصلہ۔ پانامہ کیس پاکستان سمیت دنیا بھر میں کرپٹ سیاسی اشرافیہ کے لیے ابابیل ثابت ہوا۔ جس پر بھی موزیک فونسیکا نامی لا فرم کی تحقیق کے کنکر گرے وہ جل کر بھسم ہو گیا۔ جن حکمرانوں کو عزت پیاری تھی وہ خود مستعفی ہو گئے۔ اپنی قوم سے معافی مانگی۔ جرائم کا اعتراف کیا۔ پیسہ کہاں سے کمایا اور بیرونِ ملک کیسے پہنچایا‘ سب کھل کر بیان کر دیا۔ جن لوگوں نے مگر ذلت کا راستہ چُنا، ٹی وی، پارلیمنٹ، عدالت، میٹنگ، جلسہ، ٹاک، انٹرویو سب جگہ جھوٹ بولا‘ ذلت ان کا ہمیشہ ہمیشہ کے لیے مقدر ہو گئی۔ وہ جیتے جی اَسفل السافلین میں جا گرے۔

اللہ معافی، ایسی بے عزتی کہ جس کی کوئی مثال ملتی ہے نہ ہی مسلسل رُسوائی کا آخری سِرا۔ آلِ شریف کے لیے دولت کی قلت ختم ہو گئی مگر ذلت کی فراوانی کے سمندر اُبل پڑے۔ اس مقدمے کا فیصلہ کیا ہو گا اللہ جانے یا جج محمد بشیر صاحب۔ ہاں البتہ یہ کیس قومی احتساب بیورو ایکٹ مجریہ 1999ء کی دفعہ 14 کے تحت چلایا گیا‘ جس کی ذیلی دفعہ (C) ان سارے بڑے سوالوں کے جواب کھول کر رکھ دیتی ہے‘ جو منی لانڈرنگ کے سب سے بڑے ملزم اور اس کے حواریوں نے اٹھائے‘ اور جن میں مسلسل کہا گیا: نیب کچھ ثابت نہیں کر سکا‘ جے آئی ٹی نے........

© Roznama Dunya