We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

شادمانی … کسی سبب کے بغیر!

3 0 3
12.02.2019

شادمانی … کسی سبب کے بغیر!

سیانے کہتے ہیں کہ انسان کو خوش رہنا چاہیے۔ کوئی سبب نہ ہو تب بھی! کیوں؟ ذہن کو اس کیوں کا جواب چاہیے۔ کوئی سبب نہ ہو تو انسان کیوں اور کیونکر خوش رہے؟ خوش رہنا انسان کے لیے بے حد ضروری‘ بلکہ ناگزیر ہے ‘مگر کوئی سبب بھی تو ہو‘ جو لوگ خوش ہونے اور خوش رہنے کا کوئی سبب تلاش کرتے یا جواز مانگتے ہیں‘ اُن سے سیانوں کا سوال یہ ہے کہ انسان بے ارادہ‘ کسی خواہش کے بغیر اداس اور بیزار بھی تو رہتا ہے۔ ایسا کیوں ہے؟ کوئی سبب نہ ہو تو بیزار یا اداس رہنے کی دلیل کیا ہے؟ اس حوالے سے انسان خاموش رہتا ہے اور سوچتا بھی نہیں۔ کوئی کہے کہ بھائی! خوش رہا کرو تو فوراً خوش رہنے کا جواز تلاش کرنے کی مہم شروع کردی جاتی ہے‘ مگر بلا جواز اداس اور بیزار رہنے کا کوئی جواز تلاش کرنے یا سوچنے کی زحمت گوارا نہیں کی جاتی۔

بات عجیب سی ہے ‘مگر عجیب لگنی نہیں چاہیے۔ انسان ایسا ہی تو ہے۔ اُس کے بیشتر افکار و اعمال کسی سبب یا جواز کے محتاج نہیں ہوتے۔ وہ کسی بھی حوالے سے کچھ بھی سوچ اور کرسکتا ہے اور کرتا ہی ہے۔ زندگی کا کوئی مقصد یا جواز نہ ہو تو انسان بھٹک جاتا ہے۔ جب ہم کسی خاص مقصد کے تحت زندہ رہتے ہیں تب اس قابل ہو پاتے ہیں کہ زندگی کا حق ادا کرنے کے حوالے سے اپنی سی کوشش کرسکیں۔

بہتر زندگی بسر کرنے کے حوالے سے اُصولِ تجاذب پر بنائی جانے والی معروف فلم ''دی سیکریٹ‘‘ میں مارسی شِموف کی رائے بھی شامل ہے۔ مارسی شِموف نے 2008 ء میں ''ہیپی فار نو ریزن‘‘ لکھی تھی۔ یہ کتاب غیر معمولی مقبولیت سے ہم کنار ہوئی۔ انہوں نے لکھا ہے کہ زندگی بھر غم اور خوشی ساتھ ساتھ چلتے ہیں۔ ہر ماحول میں ایسے لوگ بھی ہوتے ہیںجن پر........

© Roznama Dunya