We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

وہ ایک صفحہ کونسا ہے؟

3 0 1
13.01.2018

وہ ایک صفحہ کونسا ہے؟

ہمارے ہاں آئے روز کہا جاتا ہے ''ریاست کے تمام ادارے ایک پیج پر ہیں‘‘۔ ہمیں نہیں معلوم وہ ایک صفحہ کون سا ہے، جس پر ہماری ریاست کے تمام اکابر یکجا ہیں۔ اگر فی الواقع ایسا ہی ہے، تو روز اس کے تکرار کی ضرورت کیوں پیش آتی ہے ؟ ایک کہاوت ہے ''جب کوئی کہے: مجھ پر یقین کرو تو شک ہونے لگتا ہے اور جب قسم کھاکر یقین دلائے تو جھوٹ کا یقین ہو جاتا ہے‘‘۔ سو‘ بار بار کا تکرار شبہات میں اضافہ کرتا ہے اور پھر ظاہری قرائن اس کی تصدیق کرتے ہیں۔ جہاں تک موجودہ یکجائی کا تعلق ہے، یہ ڈونلڈ ٹرمپ کی مہربانی سے ہے۔ اسی کو انگریزی میں ''Blessing in disguise‘‘ اور فارسی میں ''عدُو شرّے بر انگیزد کہ خیر ما دراں باشد‘‘ سے تعبیر کیا جاتا ہے، یعنی دشمن کوئی شر پیدا کرتا ہے اور ہمارے لیے اُس میں سے خیر کی صورت برآمد ہو جاتی ہے۔ سو یہاں بھی صورتِ حال یہی ہے۔ ہم تمام مکاتبِ فکر کے مدارس کی تنظیمات کے لوگ جب اتحادِ تنظیماتِ مدارس پاکستان کے مشترکہ پلیٹ فارم سے حکومت سے مکالمہ کرتے ہیں تو میں حکمرانوں سے کہتا ہوں ''ہمارا یہ اتحاد آپ کی مہربانی سے ہے، ہم اپنے اپنے انداز سے کام کر رہے ہوتے ہیں کہ آپ کو محض بیرونی دبائو پر بلاضرورت چھیڑ چھاڑ کی سوجھتی ہے اور احساسِ تحفّظ ہمیں یکجا کر دیتا ہے‘‘۔کاش کہ حقیقت میں لفظاً اور معناً ہماری ریاست کے تمام ستون پارلیمنٹ یعنی مقننہ، ایگزیکٹو یعنی منتظمہ، عدلیہ اور دفاعی ادارے اس طرح یکجا ہو جائیں کہ قول و فعل اور فکر و عمل میں کوئی تضاد دور دور تک نظر نہ آئے۔ ایک دوسرے پر مکمل اعتماد کی فضا قائم ہو۔ مصنوعی بے اعتمادی پیدا کرنے یا تھوڑی بے اعتمادی کو بڑھا چڑھاکر پیش کرنے میں ہمارے میڈیا کے کچھ حصے کا بھی بہت بڑا دخل ہے کیونکہ یہ اس کی کاروباری ضرورت ہے۔ خواہ اس کی قیمت ملک کو ناقابلِ تلافی نقصان کی صورت میں برداشت کرنا پڑے۔ سو مجھ ایسے کم فہم کو آج بھی اُس ایک صفحے کی تلاش ہے، جس پر ہمارے وطنِ عزیز کے تمام اساتین (Pillars) حقیقت میں یکجا نظر آتے ہوں۔ آپ اسے ہماری لا علمی یا کم علمی پر محمول کر سکتے ہیں۔

عزت مآب چیف جسٹس آف پاکستان جناب جسٹس ثاقب نثار آج کل عوامی مفاد کے کاموں (یعنی صاف پانی، پائوڈر کا خالص دودھ، خالص دوائیں، میڈیکل کالجوں اور ہسپتالوں کا معیار بہتر بنانے) میں جُتے ہوئے ہیں........

© Roznama Dunya