We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

اختتام کی شروعات ؟

14 1 12
13.01.2018

اختتام کی شروعات ؟

جیسا کہ انگریزی میں کہا جاتا ہے Beginning of the end۔ مشرق وسطیٰ میں عرب سپرنگ (Arab Spring) کا آغاز تونیسیا کے ایک ٹھیے والے کی خود سوزی سے ہوا۔ پھر آگ بھڑکی اور پورے مشرق وسطیٰ کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ قصور کا واقعہ کچھ ایسا ہی لگتا ہے۔ قصور میں تو احتجاج کے شعلے بھڑکے لیکن پورا ملک بھی ہل کے رہ گیا۔ غم و غصہ اور سوالیہ نشان اس طرز حکمرانی پہ اٹھے ہیں جس میں طاقت کے تمام ذریعوں پہ مخصوص طبقات کا قبضہ ہے اور عام آدمی کا کوئی پُرسان حال نہیں۔

حکمرانوں کی طرف سے مذاق دیکھیے۔ حسبِ روایت پنجاب کے وزیر اعلیٰ نے قصور میں مرنے والوں کی لاشوں کی قیمت کا تعین کر دیا اور زینب کے گھر والوں سے صبح کے چار بجے ملنے گئے۔ اس سے ان کی دلیری کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔ قصور میں لیگی ممبران اسمبلی کے ڈیروں پہ بپھرے عوام نے حملے کیے ہیں۔ دن کی روشنی میں خادم اعلیٰ اگر وہاں جاتے تو اُن کے ساتھ بھی کچھ نہ ہو جاتا۔ لہٰذا انہوں نے عقلمندی کا ثبوت دیا ہے۔ شو بازی اور فنکاری میں اُن کا کوئی ثانی نہیں۔ طویل دورانیۂ اقتدار میں کوئی ڈھنگ کا کام کیا ہوتا تو پنجاب پولیس کی یہ حالت نہ ہوتی۔ بڑے سے بڑے سانحات اور وارداتیں ہوتی ہیں‘ اور ایک ہی رد عمل سامنے آتا ہے، ایک دو افسران کے تبادلے، مگرمچھ کے آنسو اور لاشوں کی قیمت کا درد سے بھرپور اعلان۔ ماڈل ٹاؤن سانحے میں تو یہ بھی نہ ہوا۔ کیونکہ حکومت خود ملوث تھی اس لئے کمال ہنر مندی سے سارے واقعے پر پردہ ڈالنے کی کوشش کی گئی اور اس میں بڑی حد تک کامیاب رہے۔ البتہ لگتا ہے‘ قصور کا واقعہ ایسے دبایا نہ جا سکے گا‘ اور شاید اس چنگاری کی مانند ثابت ہو جس سے بڑی آگ بھڑک سکتی ہے۔

یہ امر مذاق سے کم........

© Roznama Dunya