We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

منو بھائی زندہ ہیں!

3 0 1
09.11.2018

منو بھائی زندہ ہیں!

''منو بھائی کا حکم ہے کہ آصف عفان سے کہو کل شام سندس فاؤنڈیشن ہر سال کی طرح ضرور پہنچے، نہ پہنچنے کی صورت میں وہ خواب میں آ کر وہ خود ہی پوچھ لیں گے کہ کیوں نہیں آیا‘‘؟ ان الفاظ کے ساتھ گزشتہ روز یاسین خان نے دعوت نامہ دے کر تاکید کی کہ مہمانوں کی طرح نہیں میزبان بن کر مقررہ وقت سے پہلے آنا‘ جس طرح منو بھائی کی زندگی میں باقاعدگی سے آیا کرتے تھے۔

میرے جیسے خاکسار سمیت سہیل وڑائچ، خالد عباس ڈار، سہیل احمد (عزیزی)‘ خواجہ سلمان رفیق اور چند دیگر احباب کو منو بھائی اپنی زندگی میں ہی پابند کر گئے تھے کہ سندس فاؤنڈیشن میں زیر علاج تھیلیسیمیا کے بچوں کو کبھی مایوس نہ کرنا۔ ان کی خدمت اور صحت کیلئے جب بھی آواز دی جائے تو ''لبیک‘‘ کہنا۔

بلاوا ہو منو بھائی کا اور حاضری نہ ہو... ایسا تو قطعی ممکن نہیں۔ حسبِ پروگرام سندس فاؤنڈیشن پہنچا تو تھیلیسیمیا سے متاثرہ بچوں کی کثیر تعداد اُجلے اور زرق برق ملبوسات میں ہاتھوں میں پھول لیے دردِ دل رکھنے والے گورنر پنجاب چوہدری سرور کو خوش آمدید کہنے کیلئے ان کی آمد کے منتظر تھے۔ اس کے علاوہ سندس فاؤنڈیشن کے معاملات اور اخراجات رواں دواں رکھنے کیلئے منو بھائی کے درجنوں کارکن اور پیروکار بھی انتہائی گرم جوشی سے مہمانوں کے استقبال اور خاطر تواضع کے انتظامات میں مصروف تھے۔ چوہدری سرور پہنچنے کے بعد سب سے پہلے سندس فاؤنڈیشن میں موجود ان بچوں کے پاس گئے جو اس وقت انتقالِ خون کے عمل سے گزر رہے تھے۔ انہوں نے بچوں کی خیریت دریافت کی، تحفے تحائف تقسیم کیے اور متاثرہ بچوں کی حوصلہ افزائی کی۔

گورنر پنجاب نے حاضرین محفل کو مخاطب کرکے منو بھائی کے اس کارِ خیر اور مشن کو آگے بڑھانے پر زور دیتے ہوئے کہا: بلا شبہ منو بھائی وہ کام کر گئے ہیں کہ کوئی بھی ذی شعور اور دردِ دل رکھنے والا شخص ان کے نام کے ساتھ مرحوم لگانے کی ''جرأت‘‘ اور ''ہمت‘‘ نہیں کر سکتا۔ خاص طور پر متاثرہ بچے اور ان کے والدین‘ جو اس مرض کے عذاب کو مسلسل جھیل رہے ہیں، جو........

© Roznama Dunya