We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

مؤثر اور دُور رس اقدامات کی ضرورت

8 0 0
09.11.2018

مؤثر اور دُور رس اقدامات کی ضرورت

وزیراطلاعات و نشریات فواد چودھری نے ایک غیر ملکی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ تحریک لبیک پاکستان کے ساتھ 5 نکاتی معاہدہ صرف امن و امان کی مخدوش صورتحال پر قابو پانے کا مقصد پورا کرتا ہے،جہاں تک اصل مسئلے کا تعلق ہے‘ اسے مستقل بنیادوں پر حل کرنے کے لئے اہم اور دور رس اقدامات کرناہوں گے۔ وزیر موصوف نے جو کہا‘ اس پر دو آرا نہیں ہوسکتیں۔ حکومت کے علاوہ اپوزیشن میں شامل سیاسی پا رٹیاں بھی اس بات سے متفق ہیں کہ ملک کے امن و امان کو چند ہاتھوں میں یرغمال بننے سے روکنے کیلئے اہم اور دور رس اقدامات کی ضرورت ہے‘ کیونکہ امن و امان کا قیام اور لوگوں کی جان ومال کی حفاظت ریاست کی بنیادی ذمہ داری ہے۔ اگر کوئی حکومت ریاست کی بنیادی ذمہ داریاںنبھانے میں ناکام رہے تو اسے اقتدار میں رہنے کا کیا حق ہے؟ عوام اپنے ووٹوں کے ذریعے حکمرانوں کو صرف انہی مقاصد کیلئے منتخب کر کے مسند اقتدار پر بٹھاتے ہیں۔ لیکن پاکستان میں بد قسمتی سے ایسا ہوتا نظر نہیں آتا۔ ہماری قومی ترقی کے عمل میں رکاوٹ اور بیرون ملک ہمارے حالات کے بارے میں بدگمانیاں اسی وجہ سے ہیں۔ لیکن اس بارے میں نہ تو حکومت سنجیدہ ہے اور نہ سیاسی پارٹیاں ان مسائل کا کوئی مستقل حل پیش کرتی ہیں۔

تین دن تک ملک جس صورتحال سے دو چار رہا، اسے ذہن میں لا کر یہ سوال اٹھانے کی ضرورت ہے کہ ہم اس ملک کو کس سمت میں لے جا رہے ہیں؟ پورا ملک تقریباً مفلوج ہو کر رہ گیا تھا‘ موٹرویز سمیت تمام بڑی بڑی شاہرا ہیں بند تھیں۔ بڑے شہروں کے درمیان رابطے کٹ کر رہ گئے تھے۔ ضروری اشیا کی فراہمی بند ہو چکی تھی‘ لوگوں کی آمدورفت ناممکن تھی‘ سکول کالج اور یونیورسٹیاں بند تھیں اور کارخانوں کے گیٹ پر تالے لگے ہوئے تھے۔ ملک ایک محاصرے کی حالت میں تھا‘ شہری اپنے گھروں میں دبک کر رہ گئے تھے ‘ البتہ شرپسند عناصر ہاتھوں میں ڈنڈے اٹھائے شہروں میں توڑ پھوڑ میں........

© Roznama Dunya