We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

عدالتی پری پول رِگنگ

1 0 45
12.07.2018

اگر ہم تاریخ پر نظر دوڑائیں تو جمہوریت کا لفظ پہلی مرتبہ 507 قبل مسیح میں قدیم یونان کے شہر ایتھنز میں استعمال ہوا۔ اس جمہوریت کا بانی Cleisthenes تھا۔ یہ براہ راست جمہوریت تھی یعنی اس نظامِ جمہوریت میں عوام ہی قانون دان تھے اور عوام براہ راست سرکاری عہدیداروں اور ججوں کا انتخاب کرتے تھے۔ عورتوں، 20 سال سے کم عمر بچوں، غلاموں اور غیر ملکیوں کو اپنی رائے کے اظہار کا حق حاصل نہیں تھا۔ یہ جمہوریت کی کمزور ترین شکل تھی۔ لیکن جیسے جیسے وقت گزرتا گیا، جمہوری نظام میں بھی جدت آتی گئی اور ووٹنگ کا نظام بھی پہلے سے زیادہ صاف اور شفاف ہوتا گیا۔

لیکن جدید دور کے مسائل بھی جدید ہی ہوتے ہیں۔

پہلے پہل الیکشن میں ڈالے گئے ووٹوں کو تبدیل کرنا، جعلی ووٹ ڈلوانا، ووٹ چوری کرنا جیسے معاملات زیر غور رہتے تھے اور ایسا کرنے کے عمل کو انتخابات میں دھاندلی (الیکشن رِگنگ) کہا جاتا تھا۔ پھر نئی دنیا میں ایک نئی اصطلاح استعمال ہوئی ’’پری پول رِگنگ‘‘ (pre-poll rigging) یعنی الیکشن سے پہلے دھاندلی کرنا۔ اس میں الیکشن کروانے والے عملے کو ساتھ ملانا اور اپنی مرضی کے حلقے میں عوام کے ووٹ بنوانا اور الیکشن سے پہلے ہی بیلٹ باکسز میں ووٹ ڈال دینا جیسے اقدامات شامل تھے۔ اس طرح کی رِگنگ کو روکنے کےلیے باقاعدہ سزائیں متعین کی گئیں اور انہیں قانون کا حصہ بھی بنا دیا گیا۔ لیکن اکیسویں صدی میں اس تمام پری پول رِگنگ میں ایک نئی قسم کی رِگنگ کا بھی اضافہ ہوگیا ہے اور اس رِگنگ کو ایجاد کرنے کا سہرا پاکستان کے سر جاتا ہے۔ اس رِگنگ کا نام ہے عدالتی پری پول رِگنگ۔ آئیے عدالتی پری پول رِگنگ کا مطالعہ کرتے ہیں۔

پاکستان میں پچھلے دس سال سے جمہوری نظام تسلسل کے ساتھ........

© Express News