We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

وصالِ یار فقط آرزو کی بات نہیں

5 0 0
12.02.2019

ساحل، احسن اور شعیب، تینوں آپس میں گہرے دوست تھے۔ تینوں اوائل جوانی میں تھے اس لیے پڑھنے کے علاوہ سیر و تفریح اور گھومنے گھمانے میں مصروف رہتے۔ ایک دن ساحل نے کہیں جنگل میں کسی خوبصورت جگہ پر جا کر کچھ وقت بِتانے کا سوچا۔ جب اس نے یہ خیال شعیب اور احسن کے سامنے رکھا تو دونوں پر جوش ہوگئے۔

سو اس وقت وہ تینوں گاڑی پر سوار، مست ذہنوں کے ساتھ ہلا گلا کرتے جنگل کی طرف جا رہے تھے۔ پکی سڑکیں ختم ہوئیں، کچے راستے شروع ہوگئے۔ جب کچے راستوں پر بھی جھاڑیوں اور دوسری رکاوٹوں کی وجہ سے گاڑی چلانا دشوار ہوگیا تو انہوں نےگاڑی روک کر پیدل ہی آگے جانے کا فیصلہ کیا۔ چلتے چلتے آخر انہیں ایک خوبصورت سی جگہ پسند آ ہی گئی۔ یہاں قدرت نے خزانہ حسن خوب لٹایا تھا۔ ایک طرف ایک ندی بہ رہی تھے تو اس کے کنارے بہت سارے جنگلی پھول اور درخت بھی موجود تھے۔

’’ارے! وہ سامنے کیا چیز ہے؟‘‘ احسن نے اچانک کہا۔ اس کی بتائی ہوئی سمت دونوں نے دیکھا تو چونک پڑے۔ اس ویرانے میں یہ انسان کے ہاتھوں بنی ہوئی ایک دیوار سی لگ رہی تھی۔ قریب جانے پر یہ دیوار ایک کنواں ثابت ہوئی۔ یہ کنواں خاصا گہرا لگ رہا تھا۔ وہ اپنی اس دریافت پر بے حد خوش ہوئے اور اس کے بارے میں تبصرے کرنے لگے کہ یہ کیسے اور کس نے بنایا ہوگا اس ویرانے میں۔ ساحل کو بھوک محسوس ہو رہی تھی۔ ’’کاش ہم اپنے ساتھ کچھ فاسٹ فوڈ بھی لے آتے۔ میرا برگر کھانے کو بہت دل کررہا ہے۔‘‘ ابھی ساحل نے یہ فقرے اپنی زبان سے ادا کیے ہی تھے کہ اچانک اس کے سامنے والے درخت کے پاس ایک برگر اپنے سارے لوازمات کے ساتھ آگیا۔

ساحل کو اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آیا۔ اس نے فوراً اپنے ساتھیوں کو اس بارے میں بتایا تو وہ بھی حیرت سے گنگ ہوگئے۔ ’’شاید یہ کوئی جادوئی کنواں ہے جہاں پر جو بھی خواہش کی جائے، پوری ہوجاتی ہے،‘‘ احسن سوچتے ہوئے بولا۔

شعیب بولا ’’ابھی آزما لیتے ہیں اسے! میری خواہش ہے کہ ابھی ایک آئی فون آجائے۔‘‘........

© Express News