We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

مشکل حالات کے باوجود پاکستان سپر لیگ کامیاب برانڈ آخر کیسے بنی؟

4 0 0
12.02.2019

پاکستان میں ریکارڈ سردیاں پڑنے کے بعد امید ہے کہ آئندہ چند روز میں ٹھنڈک کا زور ٹوٹ جائے گا اور ماحول پر چھائی سرد مہری کا بھی خاتمہ ہوجائے گا، لیکن اگر موسم کی شدت میں فرق نہ پڑے تو بھی کوئی بات نہیں کیونکہ دلوں کو گرمانے کے لیے پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کا چوتھا سیزن بس شروع ہونےہی والا ہے۔

توقعات کے بوجھ تلے دبے اس سیزن کے بارے میں کئی خدشات تو موجود ہیں لیکن ان سے آنکھیں چراتے ہوئے ماضی پر نظر دوڑاتے ہیں۔

پاکستان سپر لیگ کا آغاز 2016ء میں بلند و بانگ دعوؤں کے ساتھ ہوا تھا اور سچ یہ ہے کہ ہمیں ان پر ذرا سا بھی یقین نہیں آیا تھا، پھر یہ سوچنا تو بہت دُور کی بات کہ پی ایس ایل اتنی کامیاب ہوگی کہ چوتھے سیزن تک پہنچ جائے گی۔

اس وقت جو خدشات تھے وہ بے جا بھی نہیں تھے کیونکہ ایک طرف پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے کمزور مالی حالات تھے اور دوسری جانب لیگ کرکٹ کے انعقاد کا ایسا میدان جس میں قدم رکھتے ہوئے انگلینڈ اور نیوزی لینڈ جیسے ممالک بھی ہچکچائیں، جہاں بنگلہ دیش اور سری لنکا ناکامی کے بھیانک تجربات سے گزر چکے ہوں اور بعد جنوبی افریقہ بھی مایوس کن نتائج بھگت چکا ہو، وہاں پاکستان کرکٹ بورڈ کا خم ٹھونک کر جانا حیران کن بھی تھا اور پریشان کن بھی۔

مجھ جیسے خوش فہم بھی سمجھ رہے تھے کہ پی ایس ایل صرف دعاؤں کے آسرے پر ہی چل سکتی ہے اور وہ بھی شاید ایک دو سیزن۔ لیکن سارے خدشات کا خاتمہ ایسے ہوا گویا وہ تھے ہی نہیں۔ پاکستان سپر لیگ نے پہلے ہی سیزن میں مقبولیت کے تمام ریکارڈز توڑ دیے۔ پاکستان نے ثابت کیا کہ وہ تمام تر بدترین حالات کے باوجود لیگ کا انعقاد کامیابی کے ساتھ کرسکتا ہے اور وہ بھی مکمل طور پر اپنے بل بوتے پر۔

لیکن آج صرف 3 سیزنز بعد، پاکستان سپر لیگ دنیا کی مقبول ترین........

© Dawn News TV