We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

بجلی چوری روکنے اور سستی کرنے کی تجاویز

3 0 1
09.11.2018

عوام کا موجودہ حالات میں سب سے بڑا مسئلہ یوٹیلٹی بلز بن گیا ہے۔ گزشتہ اور موجودہ حکومت کے عوامی ریلیف کے نعرے اور وعدے سب ہوا میں اُڑتے نظر آ رہے ہیں، ملکی معیشت کے بحران کے حل کے نام پر گزشتہ 20سال سے اقتدار میں رہنے والوں نے ورلڈ بنک اور آئی ایم ایف سے قرضوں کے حصول کے لئے عوام کو مہنگائی کی دلدل میں پھینک دیا ہے۔

20سال پہلے 50پیسے والا یونٹ اب10روپے یونٹ سے بھی اوپر جاتا دکھائی دے رہا ہے۔ گزشتہ حکومتوں نے بھی دِل کھول کر قرضے حاصل کئے اور عوام کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کے ہاں گروی رکھ دیا،موجودہ حکومت بھی گزشتہ حکومتوں کی روایت پر پوری طرح عمل درآمد کر رہی ہے۔آئی ایم ایف کا وفد جو قرضہ دینے کی شرائط طے کرنے کے لئے پاکستان پہنچ چکا ہے اس نے قرضے کی درخواست کے ساتھ ہی یقینی قرضے کے لئے پاکستانی روپے کی بے قدری اور بجلی اور گیس مہنگی کرنے کی شرط رکھی تھی، نئے پاکستان میں تحریک انصاف کی حکومت نے آئی ایم ایف کے وفد کی آمد سے پہلے ہی بجلی اور گیس کا بم عوام پر گرا کر مہنگائی کو چار چاند لگا دیئے ہیں۔

عوام کی خوش قسمتی ہے سردیاں ہیں،اے سی اور پنکھے نہیں چل رہے ورنہ عوام کا کچومر نکالنے کے لئے کافی تھا۔ حکومت نے بجلی مہنگی کرنے کے ساتھ ہی عوام کو لالی پاپ دینے کے لئے بجلی چوروں کے خلاف بھرپور ایکشن شروع کر دیا ہے۔ سروے کے مطابق35فیصد بجلی چوری ہو رہی ہے، اس کے لائن لائسز غریب عوام کو برداشت کرنا پڑ رہے ہیں۔

بجلی، گیس اور دیگر یوٹیلٹی بلز نے عوام کا جینا دوبھر کر........

© Daily Pakistan (Urdu)