We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

نظریہ کبھی مائنس نہیں ہوتا!

4 2 6
23.11.2017

بی بی مریم نوازنے صحیح کہا ہے کہ نوازشریف نظریہ ہے اور نظریہ مائنس نہیں ہوتا۔ یہ ہماری سیاسی تاریخ کی بدقسمتی ہے کہ جب کوئی سیاسی رہنما عوام میں مقبول ہوتا ہے، انہی لمحوں میں مائنس کی باتیں شروع ہو جاتی ہیں اور قدرت کا کرشمہ یہ ہے کہ وہ شخصیت تو مائنس نہیں ہوتی، ترقیاتی عمل مائنس ہو جاتا ہے، ہر بار ملک میں ایک بحران کی صورت پیدا ہوجاتی ہے اور پاکستان جگ ہنسائی کا باعث بن جاتا ہے۔ ہم پہلے ہی کہاں اتنے نیک نام ہیں کہ ہردفعہ ایک نیا دھبہ ہم پر لگ جاتا ہے۔ مائنس پلس کرنا پارلیمنٹ کا کام ہے جو عوام کے ووٹوں سے منتخب ہوئی ہوتی ہے مگر عوام منہ تکتے رہ جاتے ہیں اور یار لوگ مائنس مائنس کھیلنا شروع کر دیتے ہیں۔ نوازشریف کے ساتھ تو یہ عمل تیسری مرتبہ دہرایا جارہا ہے۔ اس مرتبہ تو حدہی ہوگئی، ان کے پورے خاندان کو صفحۂ سیاست سے مٹانے کی کوشش کی جارہی ہے، جھوٹ اور بہتان کی ایک یلغار ہے جو ان پر جاری ہے، بھائی کو بھائی سے لڑانے کی کوشش بھی کی جارہی ہے۔ مگر یار لوگ اس خاندان کی روایات سے واقف نہیں ہیں۔ شہباز شریف اپنے تمام تر قد کاٹھ کے باوجود اپنے بڑے بھائی کے سامنے چھوٹے بھائیوں کی طرح BEHAVEکرتے ہیں اور اس کے........

© Daily Jang