We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

آپ کسی بھی وقت بھٹک سکتے ہیں

6 1 6
27.10.2017

میرا ایک دوست جو ہر وقت سائے کی طرح میرے ساتھ رہتا ہے چنانچہ میں اس کے بارے میں سب کچھ جاننے کا دعویٰ کرسکتا ہوں۔ ویسے بھی وہ بہت ’’بڑبولا‘‘ قسم کا شخص ہے۔اپنی اچھائیاںاور برائیاں خود ہی بیان کرتارہتاہے۔ اس کے کردار کی سب سے بڑی خوبی اس کی دیانت اور امانت ہے اور میں نے اس حوالے سے اسے بڑی بڑی آزمائشوں میں پورا اترتا دیکھا ہے!
آج سے 65سال پہلے جب وہ چھٹی جماعت کا طالب علم تھا اور ایک غریب خاندان کا فرد ہونے کے ناتے اسے جیب خرچ نام کی کوئی چیز نہیں ملتی تھی، اسے اسکول سے واپسی پر سڑک کے کنارے ایک سوروپے کا نوٹ پڑا ملا۔ ایک لمحے کے لئے اس کے جی میں آئی کہ وہ اس رقم سے اپنی ساری ناآسودہ خواہشیں پوری کرے لیکن دوسرے ہی لمحے اس نے اس گھٹیا خیال کو اپنے ذہن سے جھٹک دیا اور گھر پہنچتے ہی یہ سو روپے کا نوٹ اپنے والد صاحب کے سپردکردیا۔ والد صاحب تین روز تک مسجد میں اعلان کراتے رہے کہ اگر کسی کی کچھ رقم گم ہوئی ہو تو وہ ان سے رابطہ کرے لیکن جب کسی نے ان سے رابطہ نہ کیا تو انہوں نے یہ سو روپے مسجد کے فنڈ میں جمع کرادیئے۔
پھر جب وہ بی اے کا طالبعلم تھااس کے والد صاحب نے 800روپے نکلوانے کےلئے اسے سیونگ اکائونٹ کی کاپی دے کر ڈاک خانے بھیجا۔ کلرک نے اسے 800کی بجائے غلطی سے 1600روپے دے دیئے۔ کالج کا طالب علم ہونے اور خوش حال خاندان........

© Daily Jang