We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

ظالموں کے خلاف مزاحمت!

12 4 8
23.10.2017

شیو کرنے کے عمل پر بہت عرصہ قبل میں نے ایک کالم لکھا تھا، مگر چونکہ اس عمل سے روزانہ گزرنا پڑتا ہے، چنانچہ جی تو یہ چاہتا ہے روزانہ اس پر کالم لکھوں، مگر ظاہر ہے یہ ممکن نہیں۔ میرے لئے یہ عمل بہت تکلیف دہ ہے، یہ کوئی شرفا کا طریقہ نہیں کہ صبح صبح امن کا سفید پرچم لہرانے کی بجائے انسان ایک بلیڈ یا پانچ بلیڈوں والا سیفٹی ریزر ہوا میں لہرائے اور پھر چہرے کے بالوں کا قتل عام شروع کردے۔ اس کے علاوہ یہ عمل مجھے دھوکہ دہی بھی لگتا ہے۔ بالوں کے قتل عام سے پہلے بالوں پر خوشبودار شیونگ فوم سے ہلکا ہلکا مساج کرنا اور ان معصوم بالوں کو یہ تاثر دینا کہ ان سے اظہار محبت ہورہا ہے اور اس کے بعد ہاتھ میں ’’استرا‘‘ پکڑ کر ان کا قلع قمع کردینا، آخر کہاں کی شرافت ہے، مگر دوسری طرف یہ حالت ہے کہ جب تک شیو نہ کروں، اس وقت تک ایک سستی سی چھائی رہتی ہے، کبھی یہاں جا بیٹھتا ہوں کبھی وہاں بیٹھ جاتا ہوں، کبھی دوبارہ بستر پر لیٹ کر کروٹیں لینے لگتا ہوں، مگر جوں ہی شیو کرتا ہوں اس کے ساتھ ہی دنیا کا ہوجاتا ہوں اور اپنے معمول کے کام شروع کردیتا ہوں جو ایک الگ........

© Daily Jang