We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

جس کا کام اسی کو ساجھے!

9 4 7
19.10.2017

مجھ جیسے کم علم کو بڑے بڑے مسائل تو کیا سمجھ میں آنا ہیں، مجھے تو سامنے کی باتیں سمجھ نہیں آتیں مثلًا یہی کہ جنہیںجو کام نہیں آتا یا وہ اس کے لئے بنے ہی نہیں۔ وہ کام کچھ لوگ کیوں کرتے ہیں اور جنہیں جو کام آتا ہے وہ اپنے کام میں دلچسپی لینا کیوں چھوڑ دیتے ہیں اور دوسرے کاموں میں زیادہ الجھ کر کیوں رہ جاتے ہیں۔ چونکہ یہ کالم مکمل طور پر غیرسیاسی ہےلہٰذا اپنی اس بات کا ثبوت دینے کےلئے میں کچھ مثالوں سے اپنی بات واضح کرتا ہوں۔ اگر یہ کالم سیاسی ہوتا تو میں بقول شخصے یہ کہتا کہ بیوی کا شک اور جمہوریت کاسفر ایک ہی کیفیت کے دو نام ہیں۔ جیسے ہی کچھ آسودگی محسوس ہونے لگتی ہے، کوئی نیا ہنگامہ کھڑا ہو جاتا ہے۔ مگر آپ دفع کریں اس بات کو کہ یہ کالم واقعی غیرسیاسی ہے اور اگر میں اس میں پڑا تو اصلی موضوع سے بھٹک جائوں گا۔ مثلاً میں کہنا یہ چاہ رہاہوں کہ کچھ لوگ زندگی میں بہت اچھی اداکاری کرتے ہیں۔ ان میںٹیلنٹ قدرتی ہوتا ہے۔ وہ تو کسی سے محبت کادعویٰ بھی کرتے ہیں تووہاں بھی ایسی لاجواب اداکاری کرتے ہیں کہ دوسرا ان کی محبت پر یقین کر بیٹھتا ہے۔ حالانکہ وہ کسی کے پہلو میں بیٹھے ہوئے بھی کسی دوسرے کو فون پر میسجنگ سے اپنی محبت کایقین دلا رہے ہوتے ہیں۔ جب انہیں اندازہ ہو کہ اس طرح ’’غلط فہمی‘‘ کاامکان ہے تو ماتھے پر ہاتھ مار کر کہتے ہیں کہ ایک تو میرےنالائق منیجر نے میری جان عذاب میں ڈال رکھی ہے چھوٹی چھوٹی باتیں بھی مجھ سے پوچھتا ہے۔ اب ایسے لوگوں کو چاہئے تھا کہ وہ اداکاری کےشعبے میں جاتے۔ اگروہ ایسا کرتے توبہت نام کماتے۔ ہمارے میڈیا میں اسکالرز سے زیادہ شوبز سے منسلک افراد اور کرکٹ کے کھلاڑیوں کو اہمیت دی........

© Daily Jang