We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

الٹا لٹکانے کے دعویدار اور پنڈی بوائے

17 189 117
14.06.2018

شیخ رشید احمد نے دو تقریریں تیار کر رکھی تھیں۔ ایک تقریر وہ تھی جو انہوں نے نااہلی کی صورت میں کرنا تھی۔ دوسری تقریر انہوں نے عدالت کی طرف سے اہل قرار دیئے جانے پر کرنا تھی۔ منگل کی شب ان کے بھتیجے راشد شفیق نے مشورہ دیا کہ سپریم کورٹ نہ جائیں۔ اگر نااہلی کا فیصلہ آگیا تو بڑی سبکی ہوگی لیکن شیخ صاحب نے کہا کہ میں لیڈر ہوں گیدڑ نہیں ہوں۔ کورٹ ضرور جائوں گا اور فیصلہ میرے خلاف آگیا تو نواز شریف کی طرح اسے مسترد نہیں کروں گا۔ بدھ کی صبح جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے فیصلہ سنا دیا جو تین ماہ سے محفوظ پڑاتھا۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنما ملک شکیل اعوان کی طرف سے شیخ رشید احمد کو نااہل قرار دینے کی درخواست مسترد کردی گئی تھی۔ شیخ صاحب مسکراتے ہوئے سپریم کورٹ سے باہر آئے اور میڈیا کے کیمروں کے سامنے بڑے فخر کے ساتھ اپنے آپ کو ’’پنڈی بوائے‘‘ کہا اور نواز شریف کو للکارتے ہوئے کہا کہ میں آ رہا ہوں اور عمران خان کے ساتھ مل کر حکومت بنائوں گا۔ شیخ صاحب چیر پھاڑ کر کھا جانےوالے لہجے میں کہہ رہے تھے کہ میں جی ایچ کیو کے گیٹ نمبر چار کی پیداوار نہیں ہوں۔ جی ایچ کیو کی پیداوار نواز شریف ہے اور پھر یہ اعلان بھی کرد یا کہ 25جولائی کے انتخابات کا فیصلہ آج 13جون کو سپریم کورٹ کےفیصلے کے بعد ہی ہو گیا ہے۔

اب تو شاید مجھے انتخابی مہم بھی نہ چلانا پڑے کیونکہ میں 25جولائی کو ہونے والاانتخاب جیت چکا ہوں۔ شیخ صاحب کے یہ الفاظ سن کر مجھے ایسا لگا کہ وہ کچھ زیادہ ہی بول گئے۔ ایک عدالتی فیصلے کووہ اپنی انتخابی کامیابی کیسے قرار دے سکتے ہیں؟ کچھ دن پہلے اسی سپریم کورٹ میں مسلم لیگ (ن) کے رہنماخواجہ محمد آصف کے حق میں بھی فیصلہ سنایا گیا تھا۔ خواجہ صاحب کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے نااہل قرار دیا تھا۔ انہوں نے یہ فیصلہ سپریم کورٹ میں........

© Daily Jang