We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

ریٹائرڈ پاکستانی افسر ترکِ وطن کیوں کرتے ہیں؟

7 2 33
31.01.2019

فیس بک(کتابِ رخ) مسکراہٹیں بھی بکھیرتی ہے، غم زدہ بھی کرتی ہے۔ آج صبح صبح کینیڈا سے پوسٹ کی گئی ایک تصویر سے میری آنکھیں بھر آئی ہیں۔ ایک ریاستی ادارے کے ریٹائرڈ آفیسرز کسی ایک ریٹائرڈ فردکے گھر پر جمع ہیں۔ اسے Reunionکہا گیا ہے۔ یہ وہ اعلیٰ افسر ہیں جو اپنی سروس کے دوران وطن پر جان نثار کرنے کو اپنا فرض جانتے ہیں، ان کے رفقا میں سے بہت سے اپنی زندگی اس عظیم وطن پر وار بھی گئے ہوں گے لیکن اس تصویر میں موجود اعلیٰ افسر ترکِ وطن پر کیوں آمادہ ہوئے؟

میری آنکھوں میں آنسو ہیں۔ بہت کچھ سوچ رہا ہوں۔ بہت سے پی این ایس یاد آرہے ہیں۔ غازی کی کہانی ذہن میں تڑپ رہی ہے۔ دوارکا معرکہ، بہت سے ملّی ترانے، پھر فیس بک پر ہی پوچھے گئے سوالات، جن کی تصدیق بھی ہوئی۔ ہمارے اعلیٰ غیر سویلین افسران اور حساس اداروں کے سربراہان ریٹائر ہونے کے بعد امریکہ، کینیڈا، آسٹریلیا میں عمر کے آخری برس گزارنے کیوں چلے جاتے ہیں۔ ہمارے سابق سفیر، ماہرین، سائنسدان، انجینئرز، اپنے اس محبوب وطن کی سکونت ترک کرکے دوسرے ملکوں میں کیوں جا بستے ہیں؟ ان کے طویل تجربات، مشاہدات، محسوسات۔ صلاحیتیں اس وطن کے کام کیوں نہیں آتیں؟ دوسرے معاشرے ان سے کیوں فائدہ اٹھاتے ہیں؟

کوئی مجبوری ہے یا لالچ۔ یہاں کیوں نہیں رہنا چاہتے۔ جس وطن کی تعمیر میں انہوں نے اپنی جوانی کے چمکتے دن وقف کیے، جس کے استحکام کیلئے انہوں نے رت جگے کیے، مسافتیں کیں، معرکے سر کیے، ریٹائرمنٹ پر ملنے والی کثیر رقوم........

© Daily Jang