We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

کلثوم نواز، باؤ جی اور گڑیا

7 335 103
17.09.2018

کسی نے کیا خوب کہا کہ کلثوم نواز نے ایک بار پہلے آمریت کے ہاتھوں جیل کی تاریک کوٹھڑی میں قید کئے گئے اپنے شوہر سابق وزیر اعظم نواز شریف کو باہر نکالا تھا اور اب دوسری بار بھی دو ماہ سے اڈیالہ جیل میں قید اپنے باؤ جی کو باہر نکالنے کی وجہ وہی بنی ہیں۔ تب تو وہ اپنے شوہر کو بچا کر اپنے ساتھ سعودی عرب لے گئی تھیں لیکن اس بار وہ اپنے باؤ جی اور اپنی گڑیا کو آخری دیدار کرانے کے بعد وہاں جا چکی ہیں جہاں سے کوئی لوٹ کے نہیں آیا کرتا۔ گیارہ ستمبر نے نوازشریف اور مریم نواز کو وہ روگ دیا ہے جو نہ صرف جیل میں بلکہ عمر بھر کیلئے ان کے ساتھ رہے گا، ایک کسک پچھتاوا بن کے ان کے دلوں میں ہمیشہ رہے گی کہ کاش وہ ہوش میں کلثوم نواز سے مل لیتے، ان کے ہلتے ہوئے ہونٹوں سے کان لگا کر ان کی سرگوشی سن لیتے، نواز شریف کو یہ ملال رہے گا کہ تقریباً پانچ دہائیوں سے ہر دھوپ چھاؤں میں ساتھ کھڑی رہنے والی شریک حیات کےآخری دنوں میں وہ انکے پاس وقت گزار لیتے اور مریم کا دل بوجھل رہے گا کہ سایہ بن کر شفقت نچھاور کرنیوالی ماں کی آخری گھڑیوں میں وہ ان کے پاؤں دبا لیتی۔ نواز شریف کیلئے جہاں ہارلے کلینک کے بستر پہ چھوڑ کر آنیو الی اہلیہ کو تابوت میں دیکھنا ایک بڑےصدمے سے کم نہیں جسے وہ باؤ جی کا بتا کر آنکھیں کھولنے کیلئے بھی نہیں کہہ سکتے تھے وہاں مریم نواز کا اس ماں کو میت کی صورت میں وصول کرنا یقیناًایک قیامت جو اس کے بہتے آنسوئوں کو دیکھ کر یہ بھی نہیں کہ سکتی تھیں کہ گڑیا تمہارے آنسو تو ہر وقت آنکھوں پہ دھرے رہتے ہیں اور نہ وہ انہیں یہ جواب دے کر ان کی ڈھارس بندھا سکتی تھی کہ امی اب آپ کی گڑیا بڑی ہو چکی اسےاب رونا نہیں آتا۔ تاریخ کتنی ظالم شے ہے جو کسی نہ کسی شکل میں خود کو دہراتی ہے ، مریم نواز نے اپنی........

© Daily Jang